پاکستان کی امریکہ کو برآمدات 8 بلین ڈالر سے تجاوز کر جائیں گی: مسعود خان

اسلام آباد (اے پی پی) امریکہ میں پاکستان کے سفیر مسعود خان نے کہا ہے کہ امریکہ کو پاکستان کی سالانہ برآمدات میں 23 فیصد اضافہ ہوا ہے اور گزشتہ سال پہلی بار برآمدات کا مجموعی حجم 5 ارب ڈالر سے تجاوز کر گیا تھا۔

اس مالی سال کے دوران، جولائی تا مئی 2021-22 کی مدت میں برآمدات پہلے ہی 6.16 بلین ڈالر تک بڑھ چکی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ جون کے اعداد و شمار، جو ابھی آنا باقی ہیں، امریکہ کو پاکستان کی کل برآمدات کے مجموعی حجم میں مزید اضافہ کریں گے۔

“امریکہ ایک اہم تجارتی شراکت دار اور پاکستان کے لیے واحد سب سے بڑا برآمدی مقام ہے۔ ہماری برآمدات میں اضافہ ایک بہت ہی امید افزا رجحان ہے”، ہفتہ کو ایک پریس ریلیز میں سفیر مسعود خان کے حوالے سے کہا گیا۔

انہوں نے کہا کہ خدمات اور آئی ٹی کے شعبوں میں امریکہ کو پاکستان کی کل برآمدات 2 ارب ڈالر سے تجاوز کر گئی ہیں۔ مجموعی طور پر، خدمات اور آئی ٹی سمیت برآمدات کا کل حجم $8 بلین سے زیادہ ہونا چاہیے۔

“پاکستان کے ٹیک سیکٹر نے، جسے بنیادی طور پر ریاستہائے متحدہ کے کاروباریوں کی حمایت حاصل ہے، نے غیر معمولی نتائج دکھائے ہیں۔ یہ اپنے مثبت راستے پر آگے بڑھنے کے لیے تیار ہے”، انہوں نے مزید کہا۔

حالیہ مہینوں میں، پاکستان میں ٹیک اسٹارٹ اپس نے سرمایہ کاری کی اور نصف بلین ڈالر کمائے۔ پاکستان میں ڈیجیٹل انٹرپرائز تیزی سے عالمی بن رہے تھے، تیزی سے ترقی کے لیے تیار۔

مسعود خان نے کہا، “ٹیک سیکٹر میں پاک-امریکہ کی شراکت داری آنے والے سالوں میں مضبوط ہو گی۔”

انہوں نے کہا کہ گزشتہ مالی سال میں امریکہ سے پاکستان کی درآمدات 2.4 بلین ڈالر رہیں۔ جولائی تا مئی 2021-22 کی مدت میں یہ بڑھ کر 2.72 بلین ڈالر ہو گئے ہیں۔ چنانچہ امریکہ سے درآمدات میں معمولی اضافہ ہوا جبکہ پاکستان کی برآمدات میں بے پناہ اضافہ ہوا۔

سفیر نے کہا کہ ماضی قریب میں پاکستان نے پاکستان اور امریکہ کے درمیان قریبی تجارتی اور سرمایہ کاری کے تعلقات پر زور دیا ہے۔ امریکی مارکیٹ میں پاکستان کی برآمدات کی نمایاں کارکردگی اس طرح کے رجحانات کو تقویت دے گی اور دونوں ممالک کے درمیان تعلقات کو مزید گہرا کرے گی۔

پاکستان اور امریکہ نے مارچ 2022 میں تجارت اور سرمایہ کاری کے حوالے سے ایک بین سیشنل اجلاس منعقد کیا جس کی قیادت امریکہ کی طرف سے اسسٹنٹ امریکی تجارتی نمائندے کرسٹوفر ولسن اور پاکستان کی طرف سے سیکرٹری تجارت محمد صالح احمد فاروقی نے کی۔ دونوں فریق اس سال موسم گرما یا موسم خزاں کے شروع میں تجارت اور سرمایہ کاری کے فریم ورک (TIFA) کے تحت وزارتی اجلاس کی تیاری کر رہے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں